یہ کیسے مسلما ن ہیں کہ جو کسی کے مجرم ثابت ہونے سے پہلے ہی اسے سزاوار ٹھراتے ہوئے قتل کر دیتے ہیں،لارڈ پاشا

Lord Pashaہالینڈ(نمائندہ خصوصی)لاہور بادامی باغ میں عیسائی کمیونٹی کے گھروں کو جلانے کے واقعہ کے مرتکب افراد درا صل نبی کریم صلعم کی تعلیمات پر عمل نہ کرتے ہوئے نافرمانی کے ضمن میں توہین رسالت کے مرتکب ہو رہے ہیں۔ان خیالات کا اظہار پاشافاؤنڈیشن کے روح رواں لارڈ ایم کے پاشا نے پاکستان میں فاؤنڈیشن کے ذمہ داران سے ٹیلیفون پرگفتگو کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہاکہ یہ کیسے مسلما ن ہیں کہ جو کسی کے مجرم ثابت ہونے سے پہلے ہی اسے سزاوار ٹھراتے ہوئے قتل کر دیتے ہیں۔ اور ایک اکثریت بلا سوچے سمجھے ان سازشی درندوں کی باتوں میں آکربیگناہ لوگوں کی املاک کو جلانے چل پڑتے ہیں۔ ایسے افراد پر حیف ہے کہ جو محسن انسانیت اور اسلام کے نام پرلوگوں میں موت اور خوف وحراس پھیلاتے پھرتے ہیں۔قبضہ مافیاکے زیر اثر درندہ صفت اسلام کے ٹھیکیدار وں کی طرف سے غرباء کے گھر جلانا کسی طرح بھی نبی کریم سے محبت کا اور اسلام کی تعلیمات پر عمل پیرا ہونیکا ثبو ت فراہم نہیں کرتا۔ انہوں نے ملک پاکستان کی خاموش اکثریت کو معاملات کا سنجیدگی سے نوٹس لیتے ہوئیے سدباب کرنیکا کہا اور سوال کیا کہ آخر ہم اس ملک پا کستان کو کیوں کر تباہ کرنے اور اسلام کو عالمی سطح پر بدنام کرنے پر تلے ہوئے ہیںآج ہمارا معاشرہ ایک پرامن، خوشحال معاشرہ کی بجائے ایک دہشت گرد اور غیر مہذ ب گردانا جاتا ہے۔ بین الاقوامی سطح پر اسلام اور مسلمان کو انتہائی نفرت آمیز رویہ کا سامنا ہماری انہی غیر سنجیدہ اور غیر انسانی حرکات کے سبب ہی کرنا پڑ رہا ہے۔ عاقبت نا اندیش حکمرانو ہوش کے ناخن لو آخر اس ملک کے معصوم عوام کو کب تک مشق ستم بناتے رہو گے۔ عوام کو ان مکروہ حرکات میں الجھا کر اس ملک کو کس نہج پر پہنچانا چاہتے ہو۔ روز انہ کسی مسجد، امام بارگاہ،درگاہ،سکول، مدار س میں بم دھما کے ہوتے ہیں مگر حکمران ٹولہ سنجید ہ کاروائی کرتے ہوئے کنٹرول کرنے کی بجائے اقتدار کو دوام بخشنے اور وسائل کی بندر بانٹ میں مصروف عمل ہیں۔ ملک میں کسی جگہ بھی انسان بلا خوف وخطرچل پھر نہیں سکتا۔لاڈ ایم کے پاشا نے مفاد پرست دکاندار ملااور قبضہ مافیاحکمرانوں کی پرزور مذمت کرتے ہوئے اس واقعہ کے متاثرین کی بھر پور مدد کرنے کا کہا ہے