Saturday, April 21, 2018
Home > تارکینِ وطن کی خبریں > تنہا نابالغ مہاجربچے اپنے اہل خانہ کو اپنے پاس بلوانے کے حق دار ہیں،اعلیٰ ترین عدالت

تنہا نابالغ مہاجربچے اپنے اہل خانہ کو اپنے پاس بلوانے کے حق دار ہیں،اعلیٰ ترین عدالت

یورپی یونین کی اعلیٰ ترین عدالت نے جمعرات کے روز اپنے ایک فیصلے میں کہا ہے کہ ایسے تنہا نابالغ مہاجر، جنہیں یورپی ممالک میں سیاسی پناہ دے دی گئی ہو، اپنے اہل خانہ کو اپنے پاس بلوانے کے حق دار ہیں۔
جمعرات کے روز اس عدالت نے اپنے ایک فیصلے میں کہا کہ ایسے مہاجر جو اس وقت یورپی یونین میں داخل ہوئے، جب وہ اٹھارہ برس سے کم عمر کے تھے اور اس کے بعد ان کی جانب سے سیاسی پناہ کے لیے دائرکردہ درخواست منظور کر لی گئی، جب کے اس دوران وہ قانونی طور پر بالغ کہلائے جانے کی یورپی یونین میں مہاجرین اور تارکین وطن سے متعلق امور انتہائی سنجیدہ نوعیت کے ہیں، کیوں کہ یورپ کی قریب تمام رکن ریاستوں میں عوامیت پسند جماعتوں نے اسی معاملے کو استعمال کرتے ہوئے اپنی عوامی مقبولیت میں اضافہ کیا ہے۔ سن 2015ء کے وسط میں مہاجرین کا ایک بہت بڑا سیلاب یورپ کی طرف امڈ آیا تھا، جس میں ایک ملین سے زائد تارکین وطن یورپی یونین پہنچے۔ تاہم اس دوران یورپ بھر میں مہاجرین مخالف جذبات میں بھی اضافہ دیکھا گیا ہے۔
یورپی یونین کی اعلیٰ ترین عدالت میں جمعرات کے روز یہ فیصلہ اریٹریا سے تعلق رکھنے والی اس لڑکی کے مقدمے میں دیا گیا، جو سن 2014 کے اوائل میں 17 برس کی عمر میں ہالینڈ پہنچی تھی، جب کہ جون میں وہ اٹھارہ برس کی ہو گئی۔ اس کی جانب سے سیاسی پناہ کے لیے دائر کی جانے والی درخواست پر فیصلہ اس کی اٹھارہویں سالگرہ سے چار ماہ بعد ہوا، جس کے تحت اسے ہالینڈ میں سیاسی پناہ دے دی گئی۔
اس نے سن 2014 کے آخر میں اپنے والدین اور تین بھائیوں کو ہالینڈ منگوانے کے حوالے سے درخواست دی، جسے ڈچ حکام نے مسترد کر دیا۔ حکام کا موقف تھا کہ والدین کو بلانے کا حق فقط ان افراد سے متعلق ہے، جن کی عمریں اٹھارہ برس سے کم ہوں اور چوں کہ وہ اٹھارہ برس سے زائد کی ہو چکی ہے، اس لیے ’فیملی ری یونیفیکیشن‘ کا یہ معاملہ اسے کے والدین کی یورپ منتقلی پر منطبق نہیں ہوتا۔ اس فیصلے کے خلاف اپیل پالینڈ کی ایک عدالت کے پاس گئی، تو اس نے اسے یورپی عدالت برائے انصاف کی جانب بھیج دیا۔
لکسمبرگ میں قائم یورپی عدالت برائے انصاف نے جمعرات کے روز اپنے فیصلے میں کہا ہے کہ ایسے تمام تارکین وطن جن کی جانب سے یورپی ممالک میں سیاسی پناہ کی درخواست قبول ہو گئی ہے، اگر وہ یورپی یونین میں داخلے کے وقت 18 برس سے کم عمر کے تھے، تو انہیں یہ حق حاصل ہو گا کہ وہ اپنے والدین کو اپنے پاس بلا سکیں۔عمر یعنی اٹھارہ برس کے ہو چکے ہوں، اپنے اہل خانہ کو یورپ بلا سکتے ہیں۔