’کریم‘ چوری کرنے کے الزام میں میڈریڈ کی وزیراعلیٰ مستعفیٰ

اسپین کے میڈریڈ صوبے کی خاتون وزیراعلیٰ کریسٹینا سیفونٹیس نے بدھ کے روز ایک پریس کانفرنس میں محض اس لیے عہدے سے استعفیٰ دے دیا کہ ان پر چند سال قبل ایک سپر مارکیٹ سے کریم کے دو پیکٹ چوری کرنے کا الزام سامنے آیا تھا۔
اسپین کے ایک آن لائن اخبار ’اوکیڈیاریو’ نے اس واقعے کی ایک فوٹیج پوسٹ کی ہے۔ کریم چوری کا یہ واقعہ 2011ء میں پیش آیا تھا۔ اس فوٹیج میں مسز سیفونٹیس کو جنوبی میڈریڈ میں واقع ایک سپر مارکیٹ کے سیکیورٹی گارڈ کے سامنے اپنا بیگ خالی کرتے دیکھا جاسکتا ہے۔ انہوں نے اعتراف کیا تھا کہ سپر مارکیٹ سے انہوں نے کریم کے دو پیکٹ چوری کیے تھے۔ بعد ازاں چالیس یوور ان کی قیمت ادا کردی گئی تھی۔ سپر مارکیٹ کی طرف سے سیفونٹیس کے خلاف کسی قسم کی شکایت درج نہیں کی گئی۔
خیال رہے کہ سیفونتیس وزیراعظم ماریانو راخوی کی قدامت پسند پیپلز پارٹی سے تعلق رکھتی ہیں۔ وزیراعظم بھی حالیہ دنوں میں ایم اے کے ایک مقالے میں جعل سازی کے الزامات کا سامنا کرچکے ہیں۔ جامعہ کارلوس کے ملازمین کا کہنا ہے کہ مقالے پر ثبت دسخط ماریانو راخوی کے نہیں بلکہ جعلی ہیں۔