روزانہ اخروٹ کھانے کے فائدے بے شمار

لندن (نیٹ نیوز ) ایک جدید طبّی تحقیق میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ روزانہ تھوڑی مقدار میں اخروٹ کھانے سے ذیابیطس ٹائپ ٹو مرض میں مبتلا ہونے کا خطرہ تقریبا نصف ہو جاتا ہے۔برطانوی اخبار ڈیلی میل کے مطابق لاس اینجلس میں کیلیفورنیا یونیورسٹی کی جانب سے ہونے والی اس تحقیق میں 34 ہزار بالغ امریکیوں نے شرکت کی۔ تحقیقی مطالعے سے سامنے آنے والے نتائج سے معلوم ہوا کہ روزانہ تین کھانے کے چمچوں کے برابر اخروٹ کھا لیا جائے تو ٹائپ ٹو ذیابیطس میں مبتلا ہونے کا امکان 47% تک کم ہو جاتا ہے۔
سابقہ طبی تحقیقوں میں بھی اخروٹ کے استعمال کا دل اور خون کی شریانوں کی صحت اور اسی طرح ذیابیطس کے مرض کے ساتھ تعلق سامنے آ چکا ہے۔محققین کا کہنا ہے کہ اخروٹ کے صحت بخش فوائد کا تعلق اس حقیقت کے ساتھ ہو سکتا ہے کہ یہ “پولی سیچوریٹڈ فیٹ” سے بھرپور ہوتا ہے۔ روزانہ مٹھی بھر کے اخروٹ کھانا امراض قلب اور آنتوں کے سرطان سے محفوظ رہنے میں مدد گار ثابت ہو سکتا ہے۔مذکورہ نئی طبّی تحقیق کے خلاصے کے مطابق چھ ہفتوں تک اخروٹ کے مسلسل استعمال سے خون کے اندر “خراب” کولیسٹرول کی مقدار کم ہو جاتی ہے۔ طبّی محققین یہ سمجھتے ہیں کہ اخروٹ میں ریشے کی کثیر مقدار انسانی آنتوں میں “اچھے” جرثوموں کی نُمو کو فعّال بناتے ہیں جس سے دل اور قولون کی صحت کو فائدہ پہنچتا ہے