دریائے شکوپی: امریکی بچوں کو بچانے والے دو سعودی طلبہ ڈوب کر جاں بحق

امریکا کی ریاست میساچوسٹس میں دو مقامی بچوں کو ڈوبنے سے بچانے کی کوشش کرنے والے سعودی طلبہ دریائے Chicopee میں غرق ہو کر اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے۔ یہ افسوس ناک واقعہ جمعے کے روز پیش آیا۔ جاں بحق ہونے والے دونوں طلبہ کے نام جاسر اور ذیب ہیں۔
جاسر کے بھائی اور ذیب کے چچا کے بیٹے عوض آل راکہ نے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ دونوں نوجوان گزشتہ پانچ برس سے اسکالر شپ پر سول انجینئرنگ کی تعلیم حاصل کر رہے تھے اور آئندہ دو ہفتوں کے دوران وہ فارغ التحصیل ہونے والے تھے۔ دونوں طلبہ فارغ التحصیل ہونے اور وطن واپس لوٹنے کے انتظار کے سبب گزشتہ تین برس سے اپنے گھر والوں سے نہیں مل سکے تھے البتہ جاسر اور ذیب کا اپنے گھر والوں سے آخری رابطہ ان کی وفات سے دور روز قبل ہوا تھا۔عوض کے مطابق دونوں متوفی نوجوانوں نے جاسر کے ایک بھائی کو بھی اپنے ساتھ چلنے کو کہا تھا تاہم وہ دوسری ریاست میں اپنے دوستوں کے ساتھ گریجویشن کی خوشیاں منانے کے سبب نہیں جا سکا۔عوض نے مزید بتایا کہ “میتوں کی حوالگی کے حوالے سے ابھی تک امریکی حکام کی جانب سے اقدامات مکمل نہیں ہوئے ہیں۔ ہم چاہتے ہیں کہ سعودی سفارت خانے کی جانب سے انتظامات مکمل کر کے دونوں افراد کی میتیں سعودی عرب کے جنوبی صوبے نجران پہنچائی جائیں”۔
امریکی ریاست میساچوسٹس نے دونوں سعودی نوجوانوں کی شناخت ذیب الیامی (27 سالہ) اور جاسر آل راکہ (25 سالہ) کے طور پر کی۔ حکام نے واضح کیا کہ ایک نوجوان کی لاش جمعے کی رات مل گئی تھی جب کہ دوسرے نوجوان کی لاش پیر کی صبح ساڑھے سات بجے ملی۔عینی شاہدین کے مطابق(Red Bridge Road) کے نزدیک دریا کے حصّے پر دو امریکی بچوں کو پانی کی طاقت ور لہروں کے سبب تیراکی میں شدید مشکلات کا سامنا تھا۔ اس دوران بہت سے لوگوں نے ان بچوں کو بچانے کی کوشش کی تاہم دنوں سعودی نوجوانوں کو دریا کی موجیں دور لے گئیں