تاریخی گاوں کالدیس میں الوؤں کے اسکیچ،ماڈلز اور پینٹنگ ، صدیوں پرانا دھوبی گھاٹ اور گندھگ ملا گرم پانی کا چشمہ سیاحوں کے لئے توجہ کا مرکز

بارسلونا(دوست نیوز)دنیا جہان میں لوگوں کے شوق الگ الگ ہیں اور انہی اشواق کی وجہ سے وہ ممالک اور قومیں اپنی ثقافتی پہچان کراتی ہیں ۔جس طرح پاکستان میں کبوتر پروری کا شوق امراء اور متوسط طبقہ میں یکساں پایا جاتا ہے ۔اسی طرح بارسلونا سے باہر تاریخی گاوں کالدیس میں ایک امیر کبیر ریسٹورنٹ مالک اسپانش کو الو کے اسکیچ،ماڈلز اور پینٹنگ جمع کرنے کا شوق ہے اپنے شوق کو پروان چڑھانے کے لئے اس نے اپنے ریسٹورنٹ میں ایک کمرہ مختص کیا ہوا ہے اور دنیا بھر میں یہاں کہیں سے بھی الو کے لکڑی پتھر پلاسٹک کے چھوٹے بڑے ماڈل ملے انہیں بچوں کے کھلونوں کی طرح بڑی الماریوں میں سنھبال کر رکھا ہوا ہے۔دور داراز سے اس تاریخی گاوں کا رخ کرنے والے سیاح اس ریسٹورنٹ میں پڑے الووں کو بھی دیکھنے آتے ہیں
اسی تاریخی گاوں کالدیس کی دوسری بڑی پہچان جو سیاحوں کو اپنی جانب متوجہ کرتی ہے وہ اس گاوں کا صدیوں پرانا دھوبی گھاٹ اور گندھگ ملا گرم پانی کا چشمہ ہے جو 1829سے اب تک مسلسل بہہ رہا ہے اور ابلنے والے پانی کا ٹمپریچر 74ڈگری سینٹی گریڈ ہے ۔جسے براہ راست کوئی بھی استعمال نہیں کر سکتا پرانے زمانے میں لوگوں نے چشمہ سے چند گز پر ایک حوض بنایا ہوا تھا یہاں پر لوگ اس گندھگ ملے پانی سے نہاتے تھے اور جلد کی بیماریوں سے شفا یاب ہوتے تھے آج بھی یورپ بھر سے لوگ جلدی بیماریوں سے نجات کے لئے اس چشمہ کے پانی کا رخ کرتے ہیں اب جدید زمانے میں نہانے کا بھی جدید انداز اختیار کیا گیا ہے اب اس گاوں میں موجود ہوٹلز فیس لے کر بیماروں اور سیاحوں کے نہانے کا انتظام کرتے ہیں ۔
تاریخی کالدیس گاؤں اپنے اس تاریخی ورثہ کی وجہ سے معروف ہے اور مقامی بلدیہ بھی اپنے ورثہ کو سنھبالے ہوئے ہے۔گو دھوبی گھاٹ کو اب جنگلہ لگا کر بند کر دیا گیا ہے۔لیکن ابھی بھی دیکھنے میں نیا محسوس ہوتا ہے۔اسپین اپنے اسی تاریخی ورثہ کی وجہ سے لاکھوں سیاحوں کو اپنی جانب متوجہ کرتاہے اورمعیشت کا بڑا انحصارانہی تاریخی مقامات پر ہے