کاتالونیا کا قومی دن، آزادی پسندوں کا کاتالونیا کو خود مختار ریاست بنانے کا عزم

بارسلونا(دوست نیوز)11ستمبر کاتالونیا کا قومی دن کاتالان آزادی کے حامیوں نے اپنی عوامی قوت کے اظہار کا ذریعہ بنالیا اورایک بہت بڑا مظاہرہ کیا جس کے بارے میں شرکاء کا اندازہ ہے کہ دس لاکھ افراد نے شرکت کی جبکہ حکومتی ذرائع کا موقف ہے کہ مظاہرے میں 4لاکھ60 ہزارافراد شریک تھے۔مظاہرے کے شرکاء گرفتار کاتالان رہنماؤں کی رہائی اور کاتالونیا کی آزادی کا مطالبہ کررہے تھے۔شرکاء نے احتجاجی بینرز،پلے کارڈزاور کاتالان آزادی کے پرچم اٹھا رکھے تھے۔کاتالونیا کا قومی دن گیارہ ستمبر کو منایا جاتا ہے اور اس دن کا آغازبارسلونا میں 1714سے شاہ سپین کی فوجوں کے ہاتھوں شکست کے بعد ہوا اور اس دن سے کاتالونیا کی خودمختاری کا خاتمہ ہوگیا ۔1980 میں اسے قومی دن کا درجہ کاتالان پارلیمنٹ کے ذریعے دیا گیا بعد میں آزادی کی تحریک کے زور پکڑنے کے بعد اس دن کی اہمیت کاتالان قوم کے لیے اور بھی بڑھ گٸ ابھی ہر سال اس دن لاکھوں لوگ آزادی کے جھنڈے لیے بارسلونا میں جلوس نکالتے ہیں اور کاتالونیا کی آزادی کا مطالبہ کرتے ہیں اس سلسلے میں ایک ریفرنڈم بھی ہو چکا ہے لیکن سپین حکومت اس ریفرنڈم کو تسلیم نہیں کرتی اور نہ ہی کاتالونیا کو آزادی دینے کے لیے تیا ر ہے مگر دن بدن آزادی پسند اور اس کی مخالفت کرنے والوں میں کشیدگی بڑھ رہی ہے
کاتالونیا میں 2012 سے اس دن کو مزاحمتی دن کے طور پر منایا جاتا ہے اور مطالبہ کیا جاتا ہے کہ کاتالونیا کو آزاد اور خودمختار ریاست بنایا جائے۔کاتالونیا کے وزیراعلیٰ کیم تورا نے کہا ہے کہ یہ مارچ ہماری جدوجہد کا نقطہ آغاز بنے گا اور اس کے بعد ہم مزید مظاہروں اور ریلیوں کا آغاز کریں گے۔انہوں نے مزید کہا کہ ہماری قوم سپین سے آزادی چاہتی ہے۔کیم تورا نے کہا کہ مرکزی حکومت کو چاہیئے کہ وہ قانونی طور پر کاتالونیا کی آزادی کے ریفرنڈم کا اعلان کرے اور7.5ملین عوام کے حق خودارادیت کو تسلیم کیا جائے۔