ہم پرامن اسلام کے امیج کو پوری دنیا کے سامنے پیش کرنا چاہتے ہیں: وزیراعظم عمران خان

وزیراعظم نے بتایا کہ اسلام آباد میں دو روزہ ختمِ نبوت انٹرنیشنل کانفرنس کا اہتمام کیا گیا ہے جس میں میں امامِ کعبہ، جامعتہ الاظہر کے وائس چانسلر، شام کے مفتی، عراق اور تیونس کے علمائے کرام شرکت کریں گےوزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ ریاست مدینہ کے قیام کے لیے علمائے کرام اور دینی طبقات کی مشاورت ضروری ہے۔وزیر اعظم عمران خان نے آئندہ 12 ربیع الاول کو شایان شان طریقے سے منانے اور 2 روزہ ختمِ نبوت ﷺ انٹرنیشنل کانفرنس منعقد کرانے کا اعلان کر دیا۔وزیرِاعظم عمران خان سے وفاقی وزیر مذہبی امور نور الحق قادری نے ملاقات کی ہے کی جس میں وفاقی وزیرِ اطلاعات فواد چوہدری سمیت دیگر رہنما بھی موجود تھے۔
ملاقات میں وفاقی وزیر مذہبی امور نے حالیہ احتجاج اور اس سے نمٹنے سے متعلق کمیٹی کی رپورٹ پیش کی۔اعلامیے کے مطابق وزیرِاعظم عمران خان کو موجودہ صورتحال پر بھی بریف کیا گیا۔اس موقع پر عمران خان کا کہنا تھا کہ ہم پرامن اسلام کے امیج کو پوری دنیا کے سامنے پیش کرنا چاہتے ہیں، حضور ﷺ کی سیرت طیبہ کے پیغامِ رحمت کو اپنی آئندہ نسلوں تک پہنچانا ریاست کی ذمہ داری ہے، مجھے ریاستِ مدینہ کے قیام کے لئے مشاورت کی ضرورت ہے، اس سلسلے میں مشائخ اور علما کے ساتھ مسلسل بذاتِ خود رابطے میں رہوں گا۔انہوں نے اعلان کیا کہ آئندہ 12 ربیع الاول کو نبی پاک ﷺ کا یوم ولادت شایانِ شان طریقے سے منایا جائے گا، اس سلسلے میں تمام صوبوں کو ہدایات جاری کر دی گئی ہیں۔وزیراعظم نے بتایا کہ اسلام آباد میں دو روزہ ختمِ نبوت انٹرنیشنل کانفرنس کا اہتمام کیا گیا ہے جس میں میں امامِ کعبہ، جامعتہ الاظہر کے وائس چانسلر، شام کے مفتی، عراق اور تیونس کے علمائے کرام شرکت کریں گے