اوورسیززپاکستانی گلوبل فاؤنڈیشن کا پاکستانی قونصل جنرل نیویارک سے اظہار تحفظات

نیویارک(پ ر) اوورسیززپاکستانی گلوبل فاؤنڈیشن کے چیئرمین ظہیر احمد مہر نے کہا کہ نیویارک امریکہ میں پاکستانی امریکی کمیونٹی کے سماجی و سیاسی رہنماؤں کو ہم خراج تحسین پیش کرتے ہیں کہ وہ کمیونٹی کے خدمت کے لیے بیک وقت حاضر ہوتے ہیں ۔ ظہیر مہر نے مزید کہا کہ پاکستانی امریکی کمیونٹی کے اہم رہنما ؤں نے کمیونٹی کو متحرک کیا جن میں ملک سلیمان، شیخ شکیل ، ڈاکٹراعجاز، ڈاکٹرزبیر، شبیر گل، طاہر میاں ، سلیم ملک، اسلم ڈھلوں ، دانش ملک، شیخ ہمایوں، رانا جاوید ، رؤف بھلی ، میاں سلطان ، طاہر سندھو، وکیل احمد ، محمد حسین ، طاہر خان، ملک مقبول ، سید تصور الحسن گیلانی ، علی رشید ، چوہدری نوید، عابد ندیم ملک، عامر شیخ، چوہد ری پرویز ریاض، ضمیر چوہدری، عدیل گوندل ، سید وسیم ، فاروق مرزا، شیخ توقیر، چوہدری سرور ، سیمی اسد، طاہرہ دین، فوزیہ چغتائی ، سعدیہ تقی، سعیدحسن ،عدنان بخاری ،منور ریاض، راجہ رزاق، سلمان ظفر، بشیرقمر، صالح سیمعٰ ،سیم خان، اوم نقوی اور چوہدری ظہور کے علاوہ دیگر رہنمابھی شامل ہیں۔ ظہیر احمد مہر نے کہا کہ کیونٹی کے تمام رہنماکمیونٹی کی خدمت کے لیے نہ دن دیکھتے ہیں اور نہ ہی رات دیکھتے ہیں ، سرد یا گرم موسم ہو لیکن یہ تمام ارکان اپنا کلیدی کردار ادا کرتے ہیں، جب بھی پاکستان نے اپنی قوم کے بیٹوں اور بیٹیوں پکارا ہیں تب یہ بیٹے اور بیٹیاں اپنا قیمتی وقت اور خون پیسنے کی کمائی لیکر پاکستان زندہ باد کے نعرے لگاتے چاہے وہ اقوام متحدہ ہو یا پھر کوئی اور اہم مقام ہو بلکہ یہ ہی کمیونٹی کے مخلص رہنمااپنا قیمتی اثاثہ وطن عزیز کے لیے قربان کرتے ہیں ، لیکن جب بھی پاکستان سے کوئی سرکاری و غیر سرکاری ممتاز شخصیت امریکہ تشریف لاتے ہیں تو پاکستانی امریکی کمیونٹی غیر متحرک رہنما جن کا کوئی کمیونٹی کی خدمات کے حوالے سے کوئی کردار نہیں، تو آفس آف قونصل جنرل پاکستان ، نیویارک نام نہاد کمیونٹی کے برساتی مینڈک کو اہمیت دیتے ہیں جن کی دلچسپی صرف وصرف ذاتی مقاصد اور ذاتی کاروبار کے لیے ہوتی ہیں۔ ظہیر احمد مہر اس حوالے مزید کہا کہ مجھے تعجب ہوتا ہے کہ ہمار ا قونصل خانہ انہیں اہمیت کیوں دیتا ہے ، کیونکہ ان کا ہماری کمیونٹی کو متحرک کروانے اور پاکستانی اوورسیزز کے نئی نسل کو پاکستان کی ثقافت و اہمیت کا شعور بید ار کروانے میں کوئی کردار نہیں اس لیے میرا قونصل جنرل آف پاکستان نیویارک سے جائز شکوہ ہے کہ انہوں نے ان سنجیدہ رہنماؤں کو ہمیشہ نظرانداز کیا ہے ، اس لیے کمیونٹی کی محرومی کو مذنظر رکھتے ہوئے میں ان رہنماؤں ترجمانی کرتے ہوئے پاکستانی سفارتی خانہ نیویارک سے اپنا اجتجاج ریکارڈ کروانا چاہتا ہوں اور میرا یہ مطالبہ ہے کہ جب پاکستانی ممتاز شخصیت امریکہ تشریف لائے تو ہمارے کیمونٹی کے مخلص اور ہردلعزیز رہنماؤں کو یاد رکھاجائے۔