لاہور: داتا دربار کے قریب خودکش حملہ، اہلکاروں سمیت 9 افراد شہید

لاہور: (دوست نیوز) داتا دربار کے باہر پولیس ناکے پر دھماکے میں 5 پولیس اہلکاروں سمیت 9 افراد شہید جبکہ 25 افراد زخمی ہوئے، ابتدائی تحقیقات کے مطابق حملہ خودکش تھا۔ پولیس کے مطابق دھماکا ایلیٹ فورس کی گاڑی کے قریب ہوا، ایلیٹ فورس کی گاڑی داتا دربار کے گیٹ نمبر دو کے قریب کھڑی تھی، دھماکے سے ایلیٹ فورس کی گاڑی مکمل تباہ ہوگئی۔ دھماکے میں شہید ہونے والوں میں 5 پولیس اہلکار، ایک سیکیورٹی گارڈ اور ایک راہگیر شامل ہیں۔ سیکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لیکر سرچ آپریشن شروع کر دیا۔ داتا دربار کے داخلی و خارجی دروازے بند کر دیئے گئے ہیں، زخمیوں کو میو ہسپتال لایا گیا ہے جہاں 7 سے 10 زخمیوں کی حالت نازک بتائی جا رہی ہے۔
ڈی آئی جی آپریشن کا کہنا ہے دھماکا صبح 8 بجکر 45 منٹ پر ہوا، یہ بہت افسوسناک واقع ہے، دھماکے میں پولیس اہلکار، ایک نجی سیکیورٹی گارڈ اور ایک شہری شہید ہوا، ایلیٹ فورس کے جوان داتا دربار کی سیکیورٹی پر مامور تھے، داتاد ربار کے حوالے سے کوئی تھریٹ الرٹ موجود نہیں تھا۔ انہوں نے کہا اس سے قبل لاہور پولیس کے 306 جوان شہید ہوچکے، محکمہ پولیس اپنے جوانوں کی جان کی قربانیاں دے رہا ہے۔
وزیراعلیٰ پنجاب نے داتا دربار کے باہر پولیس وین پر دھماکے کی مذمت کرتے ہوئے آئی جی پولیس اور ایڈیشنل چیف سیکریٹری داخلہ سے رپورٹ طلب کرلی۔ عثمان بزدار نے واقعے کی تحقیقات کا حکم دیتے ہوئے زخمیوں کو علاج کی بہترین سہولتیں فراہم کرنے کی ہدایت کر دی۔وزیراعظم نے داتا دربارد ھماکے کی مذمت کرتے ہوئے رپورٹ طلب کر لی۔ عمران خان نے قیمتی انسانی جانوں کے ضیاع پر گہرے دکھ کا اظہار کیا، غم زدہ ورثاء سے دلی ہمدردی، زخمیوں کی صحتیابی کے لئے دعا کی۔ وزیراعظم نے زخمیوں کو بہترین طبی امداد فراہم کرنے کی ہدایت کر دی