جرمنی میں مسافروں کیلئے اڑن ٹیکسی تیار

چین ، جاپان اور متحدہ عرب امارات کے بعد جرمنی نے بھی اڑنے والی ٹیکسی کی کامیاب پرواز کرلی۔ ٹیکسی میں بیک وقت پانچ افراد کے بیٹھنے کی گنجائش ہے۔ذرائع ابلاغ سے جاری خبروں کے مطابق اس جیٹ اڑن ٹیکسی کو اسٹارٹ اپ کمپنی لیلیئم نے تیار کیا ہے۔ اس ٹیکسی کی رفتار 186 میل فی گھنٹے یعنی 300 کلومیٹر فی گھنٹہ ہے۔ کمپنی نے اس کی تیاری کے لیے طویل عرصے تک تحقیق کی اور اسے کئی طرح کے ٹیسٹ سے گزارا۔رپورٹس کے مطابق جرمنی میں ایسی ٹیکسیوں پر بھی تیزی سے کام جاری ہے، جو جلد ہی ڈرون گاڑیوں اور ہوائی ٹیکسیوں کی شکل اختیار کرلیں گی۔ کمپنی کے مطابق یہ ٹیکسی سال 2025 تک بڑے شہروں میں عام دستیاب ہوگی۔
اس ٹیکسی کی ایک اور دلچسپ بات یہ ہے کہ اس میں 36 برقی انجن نصب ہیں، جو اسے عمودی پرواز کے قابل بناتے ہیں، اگرچہ اس کی رفتار بہت تیز ہے لیکن فی الحال ایک مرتبہ چارج ہونے پر یہ 80میل کا فاصلہ ہی طے کرسکتی ہے۔اس اڑن ٹیکسی کی رفتار کا اندازہ اس بات سے لگایا جا سکتا ہے کہ یہ کراچی سے حیدرآباد کا سفر فقط نصف گھنٹے یا اس سے کچھ زائد وقت میں ہی طے کرلے گی۔کمپنی ساز لیلیئم کی سب سے انوکھی بات اس کا ڈیزائن ہے، جو ڈرون موڈ میں ازخود یا پائلٹ موڈ میں کام کرتا ہے، اس ٹیکسی کی دم نہیں، راڈر نہیں اور نہ ہی کوئی گیئر باکس ہے