ڈنمارک: مسجد میں آگ

ماہِ رمضان میں اس نوعیت کا واقعہ پیش آنے پر ہمیں افسوس ہے: اوعور کینان اپیک
ڈنمارک کے دارالحکومت کوپن ہیگن سے 35 کلو میٹر مغرب میں واقع قصبے ہیڈے ہوسن کی فتح جامع مسجد کی بالائی منزل میں بعد دوپہر آگ لگ گئی۔فتح مسجد ڈنمارک ترک دیانت وقف کے تحت خدمات سرانجام دے رہی ہے اور فائر بریگیڈ کی ٹیموں کی فوری مداخلت سے آگ پر بر وقت قابو پا لیا گیا ہے۔آگ کے بعد کوپن ہیگن میں ترکی کے سفیر اوعور کینان اپیک نے مسجد کا دورہ کیا اور جاری کردہ بیان میں کہا ہے کہ ماہِ رمضان میں اس نوعیت کا واقعہ پیش آنے پر ہمیں افسوس ہے۔
انہوں نے کہا ہے کہ آگ شارٹ سرکٹ کی وجہ سے لگی اور واقعے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا تاہم مادی نقصان موجود ہے۔اپیک نے کہا ہے کہ میں ہر طرح کے حفاظتی اقدامات کے لئے حکام کے ساتھ رابطہ جاری رکھوں گا۔ ہم حکام سے توقع رکھتے ہیں کہ صرف ترک کمیونٹی کا ہی نہیں بلکہ حملے کے خطرے کے مقابل تمام مسلمانوں کا دفاع کیا جائے۔فتح مسجد کی انتظامی کمیٹی کے رکن توران آق بلُت نے کہا ہے کہ مسجد کے سکیورٹی کیمروں کی ریکارڈنگ حکام کے حوالے کر دی گئی ہے اور وہ واقعے میں کسی مشتبہ صورتحال کی موجودگی یا عدم موجودگی کا پتہ لگانے کے لئے تحقیقات کر رہے ہیں۔ تاہم جو دکھائی دے رہا ہے وہ یہ کہ کوئی تشویش کی بات نہیں ہے بلکہ آگ بالائی منزل کے سولر پینل سے لگنے کا خیال ظاہر کیا جا رہا ہے۔تاہم آق بلُت نے اس بات پر افسوس کا اظہار کیا ہے کہ وہ مسجد میں عید کی نماز ادا نہیں کر سکیں گے۔