لاہور: علامہ اقبال ائیر پورٹ پر فائرنگ، 2 افراد جاں بحق

لاہور: (دوست نیوز) لاہور کے علامہ اقبال ائیرپورٹ حفاظتی انتظامات دھرے کے دھرے رہ گیا۔ ذاتی دشمنی کے شاخسانے میں عمرہ کر کے واپس آنے والے 2 افراد دن دیہاڑے مار دیئے گئے، فائرنگ کے بعد ائیرپورٹ سیکیورٹی فورس نے ملزمان کو حراست میں لے لیا۔جدہ سے آنے والی فلائٹ سے نفیس جٹ اور زین جٹ عمرہ کر کے واپس پہنچے، تقریبا سوا دس بجے بین الاقوامی آمد کے لاؤنج سے باہر نکلے تو انہیں معلوم نہیں تھا کہ سامنے موت کھڑی ہے۔ پولیس ذرائع کے مطابق دو ملزمان ارشد اور شان نے مقتولین پر انتہائی قریب سے فائر کھول دیا جس سے نفیس موقع پر دم توڑ گیا جبکہ شان زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے جان کی بازی ہار گیا۔
ذرائع کے مطابق نفیس اور زین کا نام پیپلزپارٹی کے رہنما بابر بٹ کے قتل میں لیا جاتا ہے اور قاتلوں نے اس دشمنی کی بنیاد پر نفیس اور زین کو موت کے گھاٹ اتارا جبکہ 2017 میں درج ہونے والی بابر بٹ قتل کی ایف آئی آر میں عاطف جٹ، عرفان جٹ اور عاطی بٹ نامزد ملزمان ہیں۔ دو نامعلوم افراد اور اس وقت کے مسلم لیگ ن کے ایم این اے سہیل شوکت بٹ کو بھی نامزد کیا گیا تھا۔
ذرائع کے مطابق مقتولین کو نشانہ بنانے کے بعد ملزمان نے فرار ہونے کی کوشش کی تاہم سیکورٹی اہلکاروں نے انہیں دھر لیا۔ دو افراد تو جان سے گئے لیکن ائیرپورٹ جیسے حساس علاقے میں دن دیہاڑے فائرنگ نے بہت سے سوالات کو جنم دے دیا۔ سیکورٹی انتظامات کے باوجود اسلحہ سمیت دو ملزمان بین الاقوامی آمد لاؤنج تک کیسے پہنچے۔
کیا ملزمان کی مختلف چیک پوسٹ پر چیکنگ نہیں ہوئی، کیا ڈیوٹی پر موجود اے ایس ایف اہلکاروں نے اپنی ذمہ داری میں غفلت کی۔ ائیرپورٹ پر سکینرز سے ملزمان اسلحہ سمیت کیسے گزر گئے، لاؤنج میں موجود اے ایس ایف اہلکاروں نے ملزمان کو کیوں نہ پکڑا، ان سوالا ت کے جوابات ملنا باقی ہیں، تاہم واقعہ کے بعد روایتی اقدامات کرتے ہوئے مسافروں کی آمد روفت روک دی گئی اور ائیرپورٹ پر خوف و حراس کی فضا قائم رہی۔
وزیراعلیٰ پنجاب نے لاہور ایئر پورٹ پر فائرنگ کے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے سی سی پی او لاہور سے رپورٹ طلب کرلی۔ سردار عثمان بزدار نے واقعے کی تحقیقات کا حکم دے دیا۔ انہوں نے کہا فائرنگ کے ذمہ داروں کے خلاف قانون کے تحت کارروائی کی جائے، فائرنگ کے واقعہ کی ہر پہلو سے تحقیقات کر کے رپورٹ پیش کی جائے۔
یاد رہے اس سے قبل عارف حمید عرف ٹیپو ٹرکاں والا 22 جنوری 2010 کو ائیرپورٹ حدود میں قتل ہوا تھا، عارف حمید عرف ٹیپو ٹرکاں والا کو دبئی سے واپسی پر لاہور ائرپورٹ پر قتل کیا گیا تھا۔