بیرون ملک جانیوالے پاکستانیوں کیلئے نئی ایڈوائزری جاری

بیرون ملک سفر کرنے والے اپنے ساتھ کیا لے جا سکتے ہیں اور کیا نہیں؟ کسٹمز نے نئی ایڈوائزری جاری کردی، سونا، چاندی اور دیگر قیمتی اشیاء پاکستان سے باہر لے جانے کی اجازت نہیں، 3 ہزار روپے سے زیادہ کیش لے جانا بھی منع ہے، دیگر ممالک کی کرنسی لے جانے کی حد بھی 60 ہزار ڈالر مقرر کی گئی ہے۔بیرون ملک سفر کرنیوالوں کیلئے ایکسپورٹ پالیسی پروسیجر آرڈر کے تحت سخت پابندیا عائد کردی گئیں۔ ایف بی آر سے مشاورت کے بعد پاکستان کسٹمز نے نئی ایڈوائزری جاری کردی۔
ایڈوائزری کے مطابق کسی نے بیرون ملک جانا ہے تو 3 ہزار روپے سے زائد پاکستانی کرنسی ساتھ ہر گز نہ ہو، سونا چاندی، زیورات، ہیرے جواہرات، نوادرات بھی ساتھ لے جانے کی کوشش کوئی نہ کرے۔زر مبادلہ ساتھ لے جانے کی سالانہ حد 60 ہزار ڈالر مقرر کی گئی ہے، 5 سال تک کے بچے کیلئے 6 ہزار ڈالر تک ساتھ لے جانے کی اجازت ہوگی، 5 سے 18 سال تک کے مسافر سالانہ 30 ہزار ڈالر تک ساتھ لے جانے کے مجاز ہوں گے، جبکہ 18 سال سے زائد عمر کے مسافر 60 ہزار ڈالر سالانہ تک ساتھ لے جاسکتے ہیں۔ملکی مفادات کیخلاف لٹریچر لے جانا بھی سختی سے ممنوع ہوگا، وزارت دفاع کے این او سی کے بغیر اسلحہ، کیمیائی اجزاء، ایٹمی تابکاری سے متعلق اشیاء بھی بیرون ملک نہیں لے جائی جاسکتیں۔ایڈوائزیری کے تحت پالتو کتے اور بلیاں لے جانا بھی قرنطینہ سرٹیفیکیٹ سے مشروط ہوگا، مسافروں کی شکایات کیلئے ملک کے تمام ایئر پورٹس پر سی آر سی سیل قائم کردیا گیا، نئی ایڈوائزری سے متعلق آگہی مہم چلانے کا فیصلہ بھی کرلیا گیا ہے۔