بریشیامیں سپورٹس میلوں کی رونقیں لوٹ آئیں۔میاں آفتاب

گزشتہ ہفتے کے اختتام پر پاکستان سپورٹس کلب بریشیا کے زیر انتظام سولواں سالانہ میلہ منعقد کیا گیا۔سپورٹس فیسٹیول میں کبڈی والی بال کرکٹ کے شاندار ٹورنامنٹ کا انعقاد کیا گیا۔بریشیا اور اٹلی کی پاکستانی کمیونٹی کی بہت بڑی تعداد نے میلے میں شرکت کر کے اس میلے کو تاریخ ساز بنا دیا۔گزشتہ کئی سالوں سے سپورٹس میلوں میں سیاست۔۔ پسند ناپسند ۔۔میرا کھلاڑی تیرا کھلاڑی۔۔سٹارز کو سیاست کی نظر کرنا۔ شخصیات پرستی۔۔۔بڑے بڑے ڈائیلاگ۔۔۔ناچ گانا ڈانس۔پیسے کی نمائش۔ہیلی کاپٹر سے پھولوں کی بارش کے اعلانات ۔برہنہ خواتین کی میلوں میں شرکت کی وجہ سے بریشیا کے میلے دن بدن بے رونق ہوتے جا رہے تھے پاکستانی کمیونٹی کی دلچسپی ہر گزرتے دن کے ساتھ کم ہوتی جا رہی تھی۔پاکستان سپورٹس کلب بریشیا کی ٹیم نے صدر آصف کامران گوندل کی قیادت میں چوہدری تجمل حسین کھٹانہ کے ساتھ مل کر اس سال کے میلے کو چیلنج سمجھ کر محنت کی اور پھر وہ ہوا جس کی کسی کو امید نہ تھی۔میلے کے آغاز پر بارش کی آمد سے پریشان کمیونٹی میلے کے اختتامی روز ورطہ حیرت میں مبتلا تھی۔اتنی عوام اتنا جوش کہ ہر شخص ایک دوسرے کو مبارک باد دے رہا تھا ہر شخص خوش تھا۔ماجرا برادران۔چوہدری خالد ملک گلزار۔رفاقت راجپوت بھٹی۔صفدر میکن اور دوسرے ساتھی مبارک باد کے مستحق ہیں۔میلے کی کامیابی پر اٹلی سمیت یورپ بھر سے مبارک بادوں کا سلسلہ جاری ھے دوسرے روز بھی ٹیلیفون اور باروں پر ٹاپ ٹرینڈ پاکستان سپورٹس کلب کا میلہ ہی رہا۔میلے میں کبڈی والی بال کے سٹار کھلاڑیوں کی شرکت اور سخت مقابلوں کے ساتھ ساتھ خاص بات کونسلر جنرل میلان چوہدری منظور حسین اور سپیکر کے پی کے مشتاق غنی ۔۔ڈائریکٹر سپورٹس کے پی کے طارق محمود اووراورسیز آلاینس یورپ کے صدر معروف صحافی اعجاز حسین پیارا کی جرمنی سے شرکت تھی جس نے میلے کو چار چاند لگا دیے۔میلے میں اٹلی کی تمام سیاسی جماعتوں کی اعلی قیادت نے اپنے اپنے گروپس کے ساتھ بھر پور شرکت کی۔خاص کر بریشیا کی پاکستانی کمیونٹی نے قافلوں کے ساتھ شرکت کر کے میلے کی رونقوں میں اضافہ کیا۔میلہ انتظامیہ کے بھرپور انتظام کی وجہ سے سالوں بعد میلے میں دو واضح تبدیلیوں نے بھی عوام کو اپنی طرف متوجہ کیا ایک تو گرم جلیبی گرم پکوڑے موسم خوشگوار ہونے کی وجہ سے ٹھنڈا پانی اور دوسرا اٹالین شخصیات کی بڑی تعداد میں شرکت تھی۔اگرچہ کسی اٹالین مہمان کو تقریر کا موقع نہ دے کر ایک اچھا موقع گنوا دیا گیا دوسرا اٹالین مہمانوں نے تقریب کا وقت سات بجے دے کر دیر سے کرنے پر ناراضگی کا اظہار کیا۔ڈھول کی تھاپ بنگڑوں نے ماحول بنایا تو پھولوں کے گلدستوں اور رنگ برنگی مالاوں نے جہاں آنے والے مہمانوں کی عزت افزائی کی وہاں پر میڈیا کی طرف سے بننے والی تصویروں میں خوبصورت رنگ بکھیرے۔مسلم لیگ ن اٹلی کے صدر چوہدری اجمل خان گوٹریالہ اور زونل کونسلر چوہدری عبدلمناف مسلسل استقبالیہ پر موجود رہے۔ملک احمد رضا وحید اور چوہدری تجمل حسین کھٹانہ کی گرج دار آواز آنے والوں کو خوش آمدید کہتی رہی۔ناصر سٹار اپنی آواز کے جادو سے والی بال کے میچز کو دلچسپ بناتے تو رفاقت بھٹی کے پاکستان زندہ باد اور پاک فوج زندہ باد کے فلک شگاف نعرے تماشائیوں کا لہو گرماتے رہے ۔بہت سالوں بعد ہر پلیٹ فارم پر اورسیز کے مسائل کی آواز بلند کرنے والےچوہدری شبیر ککرالی بھی میدان میں نظر آئے۔گرانڈ کے اندر باہر تا حد نظر پاکستانی کمیونٹی کی بڑی تعداد رات دیر تک میدان میں موجود رہی۔سپیکر . صوبائی اسمبلی کے پی کے کی شرکت نے میلے کو جاندار تو بنایا مگر ان کی طرف سے سپورٹس کلب بریشیا جیتنے والی ٹیموں کو دورہ کے پی کے کی سرکاری دعوت نے با مقصد بنا دیا۔اس کی مبارک باد کس نے لینی ھے وہ کمیونٹی کو پتا ھے خود دے لے گی۔کامیاب تاریخ ساز میلے نے جہاں کمیونٹی کو خوشی دی وہاں قافلوں میں شرکت کر کے میلوں کے نام پر سیاست کرنے والوں ۔ بڑے بڑے سٹار کو بھی پیغام دے دیا۔اوورسیز کمیونٹی کو نام شہرت اور سیاست کے نام پر بلیک میل نہیں کیا جا سکتا۔جو بھی بغیر سیاست سے ملک کی ثقافت کلچر کی پرموشن کے لیے میدان سجائے گا ہم ساتھ دیں گے۔میلے میں بہت سی کمیاں خامیاں بھی موجود تھیں لیکن کامیابی اپنے اندر بہت سے عیب چھپا لیتی ھے ۔میلے کی کوریج کے لیے اٹلی میں موجود تمام میڈیا سمیت یورپ اور کریمونا سے اٹالین صحافی بھی موجود تھا۔پیپلز پارٹی یورپ کے صدر ناصر رانجھا چوہدری زمان کھٹانہ ناپولی سے محمد عمر ناز اپنی ٹیم کے ہمراہ بلزانوں سے ملک ناصر نووارا سے مستنصر وڑائچ اور فیصل چیچی بولونیا سے عرفان حیات کارپی سے چوہدری عنصر رجو ایمیلیا سے مظہر اقبال چاند لودھی سے سید فخر امام ۔خالد وارثی چیمہ دوچھہ برادران میلان سے نواز گلیانہ سوندریو سےاپنے ساتھیوں سمیت تشریف لائے۔ماجرا برادران نے میدان میں چوہدری آصف گوندل اور چوہدری تجمل حسین کھٹانہ نے میدان سے باہر اپنی اپنی صلاحیتوں کا لوہا منوایا۔