سینیگال کے فٹبالر سادیو مانی نے کردار سے دنیا کے دل جیت لیے

ڈکار: (ویب ڈیسک) سینیگال کے فٹبالر سادیو مانی نے اپنے کردار سے مسلمانوں سمیت دنیا بھر کے لوگوں کے دل جیت لیے۔ لیور پول کی جانب سے کھیلنے والے سٹار کھلاڑی آبائی ملک میں مسجد، مدرسہ، ہسپتال بنانے کی تیاریوں میں مصروف ہیں۔غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق سینیگال کے مسلمان فٹبالر سادیو مانی جو معروف برطانوی فٹبال کلب لیور پول سے وابستہ ہیں، اس کلب سے ہر ہفتے ایک لاکھ یورو تنخواہ لیتے ہیں۔ ایک سال کا کنٹریکٹ 3 کروڑ 40 لاکھ پاؤنڈز (تقریباً 7 ارب پاکستانی روپے) سے زائد کا ہے۔ لیور پول کی مسجد اور ٹوائلٹ کی صفائی کو اپنا معمول بنائے ہوئے ہیں۔ اپنے ایک انٹرویو کے دوران بتا چکے ہیں کہ مجھے فخر ہے میں ایک مسلمان گھرانے میں پیدا ہوا۔ اسلام میرا دین ہے۔ میرے والد ایک مسجد کے امام ہیں۔
یاد رہے کہ چند عرصے قبل یو ٹیوب پر ایک ویڈیو وائرل ہوئی تھی جس میں سٹار مسلمان فٹبالر مسجد میں باتھ روم کی صفائی کر رہے تھے۔ یہ مسجد برطانیہ کی ہے۔ اس کا نام ’’الرحمۃ‘‘ ہے۔ لوگوں کو جب پتہ چلا کہ باتھ روم کی صفائی کرنے والا 27 سالہ سینیگال کا مسلمان سٹار فٹبالر کھلاڑی سادیو مانی ہے تو ہر کوئی ان کی تعریف کرنے لگا۔ان کےبارے میں پتہ چلا ہے کہ وہ ایک غریب مسلمان گھر میں پیدا ہوئے، سینیگال کے شہر بامیالی میں زندگی کے ابتدائی دور گزارا، والد مسجد کے ایک پیش امام ہیں۔ جس کی وجہ سے مسجد سے تعلق اوائل عمر میں ہو گیا تھا۔2016ء میں سادیو مانی اپنے آبائی علاقے گئے اور اسی مسجد کا دورہ کیا اور اس مسجد کیلئے خطیر رقم بطور فنڈز دی۔ اس مسجد کی تعمیر ابھی جاری ہے۔ فٹبالر کی خواہش ہے کہ مسجد کے ساتھ ایک مدرسہ اور ہسپتال بھی تعمیر کیا جائے جس پر کام شروع کر دیا گیا ہے۔
یاد رہے کہ سادیو مانی نے 2005ء میں 13 سال کی عمر میں لیور پول کا میلان کیساتھ فائنل مقابلہ دیکھا تھا اور آج وہ اس یٹم میں سٹار کھلاڑی کی حیثیت سے کھیل رہے ہیں۔دوسری طرف سینیگال کے سٹار فٹبالر سادیو مانی اور مصر کے محمد صالح کو 2019ء کے بہترین فیفا مینز پلیئرز کی لسٹ میں شامل کر لیا گیا ہے۔ لسٹ میں میسی، کرسٹینا رونالڈ سمیت دیگر کھلاڑی بھی شامل ہیں۔مصر کے محمد صالح نے اپنی ٹیم کی نمائندگی کرتے ہوئے گزشتہ سیزن میں 27 گول کر کے سب کو حیران کر دیا ہے، ہر کوئی ان کی تعریف کیے بغیر نہیں رہ پا رہا۔سینگال کے معروف فٹبالر سادیو مانی نے بھی ایک سیزن کے دوران 26 مرتبہ گیند کو فٹبال کے جال کی طرف پھینکا