پاک فوج سمیت سیکورٹی ادارے قربانیاں دے رہے ہیں، کیا کوئی سیاست دان کسی ’’اپنے‘‘ کی لاش ایل او سی سے اٹھا کر لائے،لارڈ نذیر احمد

ویانا (اکرم باجوہ) ’’میں ہوں پاکستانی جشن یوم آزادی پاکستان اور اظہار یکجہتی کشمیر‘‘ کے سلسلہ میں ایک تقریب کا انعقاد آسٹریا کے دارالحکومت ویانا کے مقامی ہال میں کیا گیا جس میں پاکستانی کمیونٹی کی خواتین و مرد حضرات اور بچوں کے علاوہ اور پاکستان سفارتخانہ ویانا کے ہیڈآف چانسری لیاقت علی وڑائچ، کمیونٹی افیئرز قونصلر ہمایوں شبیر جوئیہ، طاہر جنجوعہ اور سفارتخانہ ویانا کے سٹاف نے اور آسٹرین پارلیمنٹ نیشنل اسمبلی کے ممبر احمد نے بھی خصوصی طور پر شرکت کی، ہال بالکونی سمیت کچھا کھچ بھرا ہوا تھا اور سیکڑوں لوگ ہال کے اندر اور باہر کھڑے دکھائی دیئے۔ ’میں ہوں پاکستانی ‘جشن یوم آزدی اور اظہار یکجہتی کشمیر تقریب کے مہمان خصوصی پاکستان سفارتخانہ پاکستان ویانا کے سفیر منصور احمد خان اور چیف گیسٹ کے طور پر معروف کشمیری رہنما لارڈ نذیر احمد بھی یو کے سے شرکت کے لئے ویانا تشریف لائے اور پاکستانی اور کشمیری کمیونٹی سے مل کر اظہار یکجہتی کیا۔ سٹیج سیکرٹری کے فرائض عرفان شاہد نے ادا کئے اور مہمانوں کو ’میں ہوں پاکستانی‘ جشن آزادی پاکستان اور اظہار یکجہتی کشمیر کی تقریب میں شرکت کرنے پر شکریہ ادا کیا اور جشن یوم آزادی پاکستان کی مبارک باد دی اور وقفہ وقفہ سے پاکستان زندہ باد اور کشمیر بنے گا پاکستان کے نعروں سے ہال میں موجود لوگوں کا خون گرماتے رہے۔ ہال کو پاکستانی اور کشمیر کے جھنڈوں اور میں ہوں پاکستانی بینروں سے سجایا گیا تھا اور ہال کے مین گیٹ پر منہاج القرآن آسٹریا کے صدر شیخ محبوب عالم وارثی اور جنرل سیکرٹری عمیر الطاف کی قیادت میں منہاج القرآن آسٹریا کی جانب سے مہمانوں کے لئے مشروبات کا سٹال لگایا گیا تھا ۔ تقریب کا آغاز محمد عباس خان کی تلاوت قرآن پاک سے کیا گیا۔ نعت رسول مقبولﷺ حاجراں بلوچ نے پیش کی۔ مہمان خصوصی اور چیف گیسٹ نے قومی ترانہ کی خوبصورت دھنوں کے ساتھ حاضرین شرکاء سے مل کر قومی ترانہ پڑھا اور قومی ترانہ کے اختتام پر حاضرین نے زبردست تالیاں بجا کر سبز ہلالی پرچم کوخراج تحسین پیش کیا۔تقریب کے چیف گیسٹ معروف کشمیری رہنما لارڈنذیر احمد نے اپنے خطاب میں کہا کہ ہم آزاد ملک میں سانس لیتے ہیں آزادی بہت بڑی نعمت ہے ہندوستان میں مسلمانوں کو حلال گوشت کھانے کے لئے کتنی جدوجہد کرنی پڑتی ہے جو سیاست دان ٹی وی پر بیٹھ کر بیان دیتے ہیں کہ فوجی ،پولیس، سیکورٹی ادارے جو قربانیاں دے رہے ہیں یہ اُن کی ڈیوٹی اور کام ہے مگر قربانیاں ہماری پاک فوج، پولیس اور سیکورٹی ادارے دے رہے ہیں اور دہشت گردی کے خلاف لڑ کر شہید ہوئے مگر کبھی سیاستدان اپنے بیٹوں کی لاشیں کنٹرول لائن سے اُٹھا کر لائے ہیں، سیاستدان اپنے مقصد پر کام کرتے ہیں۔ اُنہوں نے کشمیری عوام کی آزادی کیلئے دی گئی قربانیوں اور موجودہ جدوجہد کو خراج تحسین پیش کیا۔انہوں نےہال میں موجود شرکاء کو جشن یوم آزادی پاکستان کی مبارکباد پیش کی اور کہا کہ میں ہوں پاکستانی کا جو’’ سلوگن‘‘ ہے اس پر تو کسی کو کوئی اعتراض ہوہی نہیں سکتا میں اکرم باجوہ کو مبارک باد پیش کرتا ہوں اُنہوں نے اچھانام پاکستان کے حوالہ سے منتحب کیا ہے جس کے نیچے اکثریت میں لوگ موجود ہیں میں کامیاب پروگرام آرگنائز کرنے پر اکرم باجوہ اور ملک امین اعوان کو مبارک باد پیش کرتا ہوں۔مہمان خصوصی سفیر پاکستان منصور احمد خان نے اپنے خطاب میں جشن یوم آزادی پروگرام میں ہوں پاکستانی کے آرگنائزر کو کامیاب تقریب پر مبارک باد دی اور اپنے مکمل تعاون کا یقین دلایا اور کہا کہ میں ہوں پاکستانی کے پلیٹ فارم سے بہت کامیاب پروگرام رہے ہیں بلکہ 100فیصد سے بھی زیادہ کامیاب رہے ہیں اور سفیر پاکستان نے لارڈنذیر احمد کا پروگرام میں شرکت کرنے پر شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ لارڈ نذیر احمد کی کشمیر کیلئے خدمات پر خراج تحسین پیش کرتا ہوں۔ سفیر پاکستان نے مقامی سیاستدان آسٹرین پارلیمنٹ کی پاکستانی تقریب میں شرکت کو خوش آئند قرار دیا۔ اُنہوں نے کشمیر پر بات کرتے ہوئے کہا کہ آزادی کا اندازہ وہ لوگ لگا سکتے ہیں جنہوں نے آزادی کے لئے قربانیاں دی ہوں اور جو کشمیری عوام دے رہے ہیں پاکستان بھی 72 سال قبل بہت قربانیوں کے بعد وجود میں آیاتھا اُنہوں نےپاک فوج اور سیکورٹی اداروں کی پاکستان میں دہشت گردی کے خلاف جانوں کی قربانیوں کو خراج تحسین پیش کیا ۔اُنہوں نے پروگرام میں بچوں کی شاندار پرفارمنس کی تعریف کی اور کہا کہ بہت خوشی ہوئی کہ ہماری آنے والی نسل پاکستان سے بہت محبت کرتی ہے جو قابل ستائش ہے سفیر پاکستان نے کشمیری عوام کی آزادی جدوجہد پر کہا کہ ہم اُن کی اخلاقی اور سفارتی حمایت جاری رکھیں گے۔ اس سے قبل مہمان خصوصی پاکستان سفارتخانہ پاکستان ویانا کے سفیر منصور احمد خان اور کمیونٹی افیرز قونصلر ہمایوں شبیر جوئیہ،آسٹرین پارلیمنٹ ممبر نیشنل اسمبلی مسٹراحمداور چیف گیسٹ معروف کشمیری رہنما لارڈ نذیر احمد بالترتیب تقریب ہال میں پہنچے تو پروگرام آرگنائزر اکرم باجوہ،حاجی ملک امین اعوان ،ڈاکٹر عقیل خان، نوید عاصم،عرفان شاہد،محفوظ خان،الحاج شیخ وحید احمد،حاجی قاسم علی،محمدصدیق عاصم،چوہدری حفیظ،رانا قمر ودیگر نے مہمانوں کا پرتپاک استقبال کیا اور پھول پیش کئے اور تقریب میں خوش آمدید کہا۔تقریب میں مسز اکرم باجوہ نے خواتین وحضرات سے پاکستان کے حوالہ سے کوئزسوالات کئے۔ تقریب میں عبیر ملک اعوان، ابراہیم اور زبیر ملک نے پاکستان کے عنوان سے تقاریر کیں اور ملی و قومی نغمے پیش کئے۔ پروگرام میں پشتون بچوں نے پشتو گانے پر اپنے روائتی انداز میں پرفارمنس پیش کی اور ہال تالیوں سے گونج اُٹھااور خوب داد وصول کی۔پاکستان کے حوالہ سے مختلف مقررین محمد صدیق عاصم،فاروق چوہدری، محفوظ خان اور شیخ وحید احمد نے بھی اپنے اپنے خیالات کا اظہار کیا۔ تقریب میں پاکستان کی تاریخی اور ثقافتی ڈاکومنٹری بھی دکھائی گی۔ پروگرام کی خاص بات جس نے تقریب کر چار چاند لگائے ترکی لڑکی نے اُردو زبان میں پاکستان بننے کی تاریخی لمحات پر بڑی تفصیل سے روشنی ڈالی اور پاک ترک دوستی کے نعروں سے ہال گونج اُٹھا۔تقریب کے اختتام پر قرعہ اندازی میں قیمتی انعامات بھی دیئے گے اور پاکستان کا ریٹرن ٹکٹ ترکش ائر لائن کا ائرلنک کی جانب سے سپانسر کیا گیا ٹکٹ کی قرعہ اندازی اکرم باجوہ اور ترکش ائرلائن کے مینجر نے کی تو ہال کی تالیوں کی گونج میں پاکستان کا ریٹرن ٹکٹ خوش نصیب نمبر06 ریاض بلوچ کا نکلا جو اُسی وقت ریاض بلوچ کو ترکش ائرلائن کا کوپن تالیوں کی گونج میں دیا گیا۔ تقریب کے آخر میں آرگنائزر حاجی ملک امین اعوان اور اکرم باجوہ نے پاکستانی کمیونٹی ویانا او ر سفارت خانہ پاکستان اور لارڈنذیر احمد اور آسٹریا سے باہر کے مہمانوں کا تقریب میں شرکت پر شکریہ ادا کیا۔ اکرم باجوہ کے پاکستان زندہ باد کے نعروں سے تاریخی پروگرام اختتام پذیر ہوا۔