یورپی پارلیمنٹ کی انگڑائی،29 روز کے کرفیو کے بعد آج مسئلہ کشمیر پر بحث شروع

اجلاس میں بھارت کی جانب سے 5 اگست کے غیر آئینی اقدام اور اس کے بعد مقبوضہ وادی میں ریاستی دہشت گردی پر غور کیا جائے گاç اس کے علاوہ اجلاس میں مقبوضہ وادی میں مسلسل کرفیو سے کشمیریوں کو درپیش مسائل بھی زیرغور آئیں گے
یورپی پارلیمنٹ میں مسئلہ کشمیر پرآج بحث ہوگی، وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ امیدہے کہ یورپین پارلیمنٹ انسانی حقوق کے لئے کردار ادا کرے گی۔مقبوضہ کشمیر کے مسئلے پر یورپین پارلیمنٹ کی خارجہ کمیٹی کا ان کیمرہ اجلاس آج برسلز میں ہو گا۔وزیراعظم آزاد کشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان اجلاس میں شرکت کے لیے برسلز پہنچ گئے ہیں۔اجلاس میں بھارت کی جانب سے 5 اگست کے غیر آئینی اقدام اور اس کے بعد مقبوضہ وادی میں ریاستی دہشت گردی پر غور کیا جائے گا۔اس کے علاوہ اجلاس میں مقبوضہ وادی میں مسلسل کرفیو سے کشمیریوں کو درپیش مسائل بھی زیرغور آئیں گے۔
وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ یورپی یونین پارلیمنٹ میں مسئلہ کشمیرپراجلاس بڑی کامیابی ہے،اجلاس میں وزیراعظم آزاد کشمیر بھی شریک ہوں گے۔کشمیر کونسل یورپی یونین کے چیئرمین علی رضا سید کا کہنا ہے کہ یورپی پارلیمنٹ میں مقبوضہ کشمیر پر اجلاس بہت بڑی کامیابی ہے، کشمیریوں کی آواز یورپ تک پہنچا شروع ہوگئی ہے، بھارت کشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیاں کررہا ہے۔دوسری جانب سربراہ یورپی خارجہ امور کی برسلز میں بھارتی وزیرخارجہ جے شنکر سےملاقات ہوئی تھی ، ملاقات میں سربراہ یورپی خارجہ امور نے مسئلہ کشمیر اٹھایا اور عوام کے حقوق اور آزادی بحال کرنے پر بھی زور دیا۔
خیال رہے وزیر خارجہ نے تین ستمبر کو لندن میں بھارتی ہائی کمیشن کےباہراحتجاج کرنے بھی اعلان کیا کرتے ہوئے کہا تھا کہ امیدہے کہ یورپین پارلیمنٹ انسانی حقوق کیلئےکردارادا کرے گی۔شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ پاکستان پُرامن ملک ہے، جنگ آخری آپشن ہوتاہے،ابھی مذاکرات کاماحول دکھائی نہیں دے رہا، کیا کرفیو میں مذاکرات ہوں گے، بھارت جہاں بھی گیا منہ کی کھائی ہے۔واضح رہے مقبوضہ کشمیر میں آج مسلسل 29ویں روز بھی کرفیو برقرار ہے اور مواصلات کا نظام مکمل پر معطل ہے، قابض انتظامیہ نے ٹیلی فون سروس بند کررکھی ہے جبکہ ذرائع ابلاغ پرسخت پابندیاں عائد ہیں۔کشمیرمیڈیا سروس کے مطابق مواصلاتی نظام کی معطلی، مسلسل کرفیو اور سخت پابندیوں کے باعث لوگوں کو بچوں کے لیے دودھ، زندگی بچانے والی ادویات اور دیگر اشیائے ضروریہ کی شدید قلت کا سامنا ہے۔وزیراعظم آزاد کشمیر راجہ فاروق حیدر شام کو برسلز پریس کلب میں ایک پریس کانفرنس سے بھی خطاب کریں گے