پیرس، پاکستان میلے میں سینکڑوں افراد کی شرکت

پیرس کے نواحی شہر سارسل میں فرانسیسی پاکستانی کمیونٹی کی پاکستان میلے کے تیسرے ایڈیشن میں سینکڑوں افراد نے شرکت کی۔
پیرس(رضا چوہدری)پاکستانی میلے کا تیسرا ایڈیشن پیرس کے نواحی شہر سارسل میں منعقد کیا گیا، اس سال یہ پاکستانی میلہ مقبوضہ و جموں کشمیر کے مظلوم عوام کے ساتھ اظہار یکجہتی کے طور پر منایا گیا ہے، میلے کا افتتاح معین الحق سفیر پاکستان فرانسیسی پارلیمنٹ کے رکن فرانکوائس پپونی اور سارسل کے میئر پیٹرک ہداد نے مشترکہ طور پر کیا۔میلے میں مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے سینکڑوں افراد کے علاوہ مقامی فرانسیسی سیاستدانوں، فرانسیسی اعلیٰ عہدیداروں، سفارتکاروں، فرانسیسی سول سوسائٹی کے اراکین اور صحافیوں کی بڑی تعداد نے شرکت کی۔میلے کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے سفیر پاکستان نے میلے کو کامیابی سے ہمکنار کرنے پر پاکستانی میلے کی انتظامیہ کا شکریہ ادا کیا اور فرانس میں مسئلہ کشمیر کو بھرپور انداز سے اجاگر کرنے پر پاکستانی کمیونٹی کی تعریف بھی کی۔
انہوں نے کشمیری عوام کے ساتھ پاکستان کی سیاسی، اخلاقی اور سفارتی مدد جاری رکھنے کا بھی اعادہ کیا۔اس موقع پر فرانکوائس پپونی اور پیٹرک ہداد نے بھی خطاب کیا اور اس میلے کے انعقاد کرنے پر پاکستانی کمیونٹی کا شکریہ ادا کیا اور اسے فرانسیسی ثقافتی پس منظر میں ایک قابل قدر اضافہ قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس سے فرانسیسی عوام کو فرانس میں ایک چھوٹا پاکستان دیکھنے کا نادر موقع فراہم ہوا ہے۔معروف صحافی اور کالم نویس سہیل وڑائچ نے کہا کہ مسلمانوں نے ہر دور میں مختلف اقوام کی مدد کی یورپ کی آزادی سمیت مختلف موقعوں پر ان کی بھرپور مدد کی اب مقبوضہ کشمیر میں مسلمانوں پر مظالم کے خلاف ان کو بھی آواز اٹھانی چاہیے ۔معروف کشمیری راہنما لاڈ نذیر احمد نے کہا کہ وہ وقت دور نہیں جب انڈیا کے مقبوضہ کشمیر میں مظالم کا خاتمہ ہوگا بلکہ وہاں آباد تمام مذہب ہندو ازم سے نجات حاصل کرکے رہیں گے ، لاڈ نذیر احمد نے مقبوضہ جموں و کشمیر کے عوام پر ہونے والے ظلم و ستم پر اپنی گہری تشویش کا اظہار کیا جو گزشتہ 8 ہفتوں سے شدید غیرانسانی کرفیو کی زد میں ہیں۔
تقریب کے دوران نوجوان بچوں نے حب الوطنی کے گیت گائے اور کشمیری عوام سے اظہار یکجہتی کے لیے بہت سی تقریریں بھی کی گئیں جن میں مقررین نے بین الاقوامی برادری سے مطالبہ کیا کہ وہ اقوام متحدہ کی سیکیورٹی کونسل کی قراردادوں اور کشمیری عوام کی امنگوں کے مطابق دہائیوں پرانے مسئلہ کشمیر کا مستقل حل تلاش کرنے میں اپنا بھرپور کردار ادا کریں۔اس موقع پر پاکستانی روایتی کھانوں، مصنوعات اور روایتی تحائف کے متعدد اسٹالز بھی لگائے گئے تھے جو میلے میں آئے ہوئے مہمانوں کی توجہ کا مرکز بنے رہے۔اس میلے میں پاکستان کے معروف گلوکار ساحر علی بگا اور محترمہ شگفتہ اعوان کو خصوصی طور پر پاکستان سے مدعو کیا گیا تھا جن کے حب الوطنی کے گیتوں، صوفی موسیقی اور ان کے اپنے مشہور گیتوں نے اس شام کو چار چاند لگا دیئے۔واضح رہے کہ پاکستان میلے کے تیسرے ایڈیشن کا اہتمام معروف سیاسی سماجی شخصیات قدیر احمد، عمیر بیگ ،راجہ ابرار کیانی، سردار ظہور اقبال اورمحترمہ روحی بانو پر مشتمل کمیٹی نے کیا۔خصوصی مہمانوں میں ہر دل عزیز سینئر صحافی سہیل وڑائچ ، معروف کشمیر راہنمالارڈ نذیر آحمد ، سفیر پاکستان معین الحق ، پاکستان مسلم لیگ (ن) کے سینئر راہنما عابد شیر علی اور معروف گلوکار سحر علی بگھااور محترمہ شگفتہ اعوان تھے ۔