اسلام قبول کرنے والی کینیڈین سیاح روزی گیبرئیل حج کرنے جائینگی

اسلام آباد: (مانیٹرنگ ڈیسک) اوائل جنوری میں اسلام قبول کرنے کا اعلان کرنے والی کینیڈین بائیکر گرل اور سیاح روزی گیبرئیل نے حج یا عمرہ کرنے کی خواہش کا اظہار کیا ہے۔روزی گیبرئیل کا کہنا ہے کہ وہ اپنا نام تبدیل نہیں کریں گی اور نہ ہی مستقل حجاب اختیار کریں گی، البتہ آئندہ ایک برس کے دوران حج یا عمرہ کرنے کا ارادہ رکھتی ہیں۔موٹر سائیکل پر دنیا بھر کی سیاحت کے لئے نکلنے والی روزی نے منگل کو انسٹاگرام پر اپنی ایک پوسٹ میں لکھا تھا کہ انہیں اپنے فیصلے پر آنے والے ردعمل کا اندازہ نہیں تھا، اس اقدام پر انہیں بھرپور پذیرائی ملی۔نیک خواہشات ظاہر کرنے والوں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے انہوں نے لکھا کہ وہ اپنی زندگی کے نئے مرحلے پر ملنے والی محبتوں اور تعاون پر شکرگزار ہیں۔
خیال رہے کہ پاکستان کے مختلف مقامات پر سیاحتی غرض سے گھومنی والی کینیڈین موٹر سائیکل سوار ولاگر روزی گیبرائل نے گزشتہ دنوں اسلام قبول کر لیا تھا۔روزی گیبرائل دسمبر 2018ء میں پاکستان آئیں تو خوفزدہ تھیں کیوں کہ انہیں یہاں کے حوالے سے بہت غلط باتیں بتائی گئی تھیں۔ روزی نے پاکستان میں داخل ہوتے ہی میڈیا کو بتانے سمیت اپنی انسٹاگرام پوسٹ میں پاکستان کے حوالے سے پائے جانے والے خدشات سے متعلق لوگوں کو بتایا تھا اور کہا تھا کہ انہیں مشورہ دیا گیا کہ وہ پاکستان نہ جائیں۔
روزی گیبرائل کا کہنا تھا کہ تمام خدشات اور لوگوں کے روکنے کے باوجود پاکستان آئی ہیں اور وہ یہاں کے 40 مقامات کا سیر کرکے دنیا کو خوبصورتی دکھائیں گی۔کینیڈین ولاگر اور سیاح خاتون نے بعد ازاں لاہور، قصور، ملتان اور گوادر سمیت شمالی علاقہ جات کا بھی سفر کیا تھا اور انہوں نے وہاں جاکر ویڈیوز بھی بنائی تھیں۔روزی گیبرائل تقریباً 14 ماہ سے پاکستان میں تھیں اور اب انہوں نے سوشل میڈیا پوسٹ کے ذریعے اسلام قبول کرنے کا اعلان کرکے لوگوں کے دل جیت لیے۔روزی گیبرائل نے انسٹاگرام پر بڑی پوسٹ کی، اس کے آغاز میں ہی لوگوں کو خوشخبری دی اور بتایا کہ دائرہ اسلام میں داخل ہو چکی ہیں۔
روزی گیبریل نے پوسٹ میں لکھا کہ انہوں نے تو پرانا مذہب 4 سال قبل چھوڑ دیا تھا تاہم اب وہ امن، محبت، انسانیت اور زندگی گزارنے کے سب سے بہترین راستے بتانے والے مذہب کے دائرے میں داخل ہو چکی ہیں۔کینیڈین ولاگر نے پوسٹ میں زندگی میں آنے والے مسائل اور مشکلات کا ذکر بھی کیا اور خود کو تکنیکی طور پر پیدائشی مسلمان بھی قرار دیا اور کہا کہ چونکہ اسلام قبول کرنے سے قبل ہی خدا پر یقین رکھتی تھیں۔روزی گیبرائل کا کہنا تھا کہ زندگی کی ایک دہائی مسلمان ممالک میں گزاری اور اس دوران انہوں نے ہر جگہ پیار، امن اور مسکراہٹیں دیکھیں اور یہی سلسلہ پاکستان میں بھی رہا جس وجہ سے وہ اسلام سے بے حد متاثر ہوئیں اور انہوں نے اس کی راہ پر چلنے کا عہد کیا۔
کینیڈین سیاح خاتون نے پوسٹ میں عالمی سطح پر اسلام کے خلاف ہونے والے پروپیگنڈے پر بھی بات کی اور لکھا کہ افسوس کے ساتھ کہنا پڑ رہا ہے کہ دنیا بھر میں اسلام کی غلط طریقے سے تشریح کی جاتی ہے۔روزی گیبرائل نے لکھا کہ درحقیقت اسلام امن، محبت اور انسانیت کا مذہب ہے بلکہ اس سے بڑھ کر یہ مذہب زندگی کو درست انداز میں آگے بڑھانے اور سکون کا مذہب ہے۔ولاگر کی جانب سے اسلام قبول کیے جانے کی پوسٹ کیے جانے کے بعد کینیڈا اور پاکستان سمیت دنیا کے دیگر ممالک میں موجود ان کے مداحوں نے ان کے فیصلے کا خیر مقدم کیا۔