کندس ہائیپر مارکیٹ ملتان کا افتتاح وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے فیتہ کاٹا

ملتان(دوست نیوز)اوورسیز پاکستانیوں کی پاکستان میں سرمایہ کاری سے پاکستانی کی معیشت کو ناصر ف استحکام ملے گا بلکہ مقامی لوگوں کے لئے روزگار کے مواقع بھی پیدا ہونگے ۔اسپین سے چوہدری امانت حسین مہر پاکستان میں بڑی سرمایہ کاری کر رہے ہیں، انہوں نے اسپین کا ایک بڑا ہائیپر مارکیٹ میں بڑا نام کندس ہائیپر مارکیٹ کو پاکستان میں متعارف کرایا ہے۔ جس کی پاکستان کے تمام بڑے شہروں میں برانچوں کے افتتاح کا سلسلہ جاری ہے پانچ ماہ کی قلیل مدت میں لاہور،جہلم اور ملتان میں بڑی مارکیٹس کا افتتاح کردیا گیا۔ لاہور میں گورنر چوہدری محمد سرور نے افتتاح کیا تو ملتان میں وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی نے افتتاح کر کے بیرونی سرمایہ کاری اور چوہدری امانت حسین مہر کی وطن سے محبت پر مہر تصدیق لگا دی۔
مہمان خصوصی وزیرخارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے چوہدری امانت حسین مہر، چوہدری شجاع امانت حسین مہر، چوہدری کرامت حسین مہر،چوہدری سلامت حسین مہر کے ہمراہ فیتہ کاٹ کر افتتاح کیا۔ افتتاح کے موقع پر ملتان کی عوام کا جذبہ دیدنی تھا،ہزاروں کی تعداد میں لوگ افتتاحی تقریب کو دیکھنے کے لئے موجود رہے اور تالیاں بجا کر خوشی کا اظہار کیا۔
افتتاحی تقریب کا آغاز تلاوت قرآن مجید سے کیا گیا جس کی سعادت بادشاہی مسجد کے خطیب علامہ عبدالخبیر آزاد نے حاصل کی اور کاروبار اور وطن کی سلامتی کی دعا بھی فرمائی۔
افتتاحی تقریب کے مہمان خصوصی وزیرخارجہ مخدوم شاہ محمود قریشی نے اپنے خطاب میں کہا اس سے معاشی سرگرمی فروغ پائے،جب ایک عمارت کھڑی ہوتی ہے تو اس کا فائدہ مالکان کو ہی نہیں کرایہ کی شکل میں وصول کرتے ہیں۔اس میں ملازمتیں پیدا ہوتی ہیں،بہت سے بچے بچیوں کو ملازمت کا موقع ملتا ہے۔بہت کچھ سیکھنے کو ملتا ہے جس سے وہ آگے بڑھتے ہیں۔ملتان میں کندس ہائیپر مارکیٹ کے قیام سے تبدیلی آئے گی اور اس طرح کے مالز میں بھی اضافہ ہوگا،چوہدری امانت حسین مہر کو مبارک باد پیش کرتا ہوں جو ملتان کے باسیوں کو ورائٹی اور چوائس دے رہے ہیں وہ بھی اسپین کے ایک معیاری پرودکٹ کی صورت میں،میں آپ کی ترقی کے لئے دعاگو ہوں۔
وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کو کندس ہائیپر مارکیٹ کی تین منزلوں اور ہر شعبہ کا دورہ کرایا گیا اور انہیں تفصیلی بریفنگ بھی دی گئی جسے وزیرخارجہ نے دلچسپی سے سنا بلکہ سوالات بھی کئے۔
کندس پاکستان کے سی ای او چوہدری امانت حسین مہر نے اپنے خطاب میں کہا کہ کندس ہائیپر مارکیٹ کا آئیڈیا پرانا ہے اور اس وقت اسپین میں میرے بڑی تعداد میں اسٹورز موجود ہیں اور کامیابی سے کام کر رہے ہیں لیکن اس کے باوجود ہم پاکستان آئے ہیں۔میں یہ سمجھتا ہوں کہ کوئی بھی پاکستانی ہو وہ پاکستان میں رہے یا پاکستان سے باہر کہیں بھی اس کا دل پاکستان کے لئے دھڑکتا ہے۔پاکستان میں کوئی مشکل یا تکلیف آتی ہے تو آپ لوگ دیکھتے ہیں کہ اوورسیز سب سے بڑھ چڑھ کر آگے آتے ہیں اور وطن عزیز کی خدمت کرتے ہیں۔میں جب باہر گیا تو بعد میں بھائی اور ہمشیرہ بھی اسپین آگئے پھر ہم نے سوچا کہ اس طرح تو سبھی باہر آجائیں گے تو گھر خالی ہو جائے گا۔سوچا کہ ایسا نظام بنایا جائے جس سے ہم پاکستان میں رہیں اور اس کے ساتھ جڑے رہیں،میں ہی نہیں ہر پاکستانی یہی سوچتا ہے کہ میں چند سال محنت کروں گا اور پاکستان واپس آجاوں گا۔ہماری اکثریت سوچتی ہے کہ ہم پاکستان سے باہر چلے جائیں،اور باہر جا کر جتنی محنت کرتے ہیں اتنی اگر اپنے ملک میں کریں تو وہی صلہ پا سکتے ہیں، باہر جاکر اگر کندس میں کام کرنا ہے تو ہم کندس کو ہی اپنے وطن لے آئے ہیں۔ آپ یہاں پر ہمارے ساتھ چلیں یہاں پر سروس دیں جس کی آپ کے ہم وطنوں کو ضرورت ہے۔
افتتاحی تقریب میں وزیر خارجہ شاہ مخدوم محمود قریشی کو چوہدری امانت حسین مہر CEO کندس پاکستان نے یادگاری شیلڈ پیش کی۔ان کے علاوہ ڈاکٹراختر ملک،صوبائی وزیر برائے توانائی ۔ندیم قریشی ایم پی اے ،ظہیرالدین خان علی زئی ایم پی اے ،حاجی جاوید اختر انصاری ایم پی اے ،وسیم سیال آر پی او ملتان ،عمران احمر آر پی او ڈی جی خان ،عامر خٹک ڈی سی ملتان ،ارشد خان ،فضل عباس شاہ کو چوہدری کرامت حسین مہر، چوہدری سلامت حسین مہر،چوہدری عامر نواز اور مسٹر جوانی نے یاد گاری شیلڈز پیش کی گئیں۔
افتتاحی تقریب کو دیسی میوزک کا تڑکا بھی لگایا گیا جس پر ہال میں موجود شائقین جھومتے اور تالیاں بجا کر داد دیتے رہے۔